Article

غیرت والوں نے ایک اور بدنصیب کو نشانہ بنا ڈالا ، مردان میں سگی بہن کو بجلی کے شاک لگا لگا کر بھائیوں نے ہلاک کر دیا

1086 views

Disclaimer*: The articles shared under 'Your Voice' section are sent to us by contributors and we neither confirm nor deny the authenticity of any facts stated below. Parhlo PInk will not be liable for any false, inaccurate, inappropriate or incomplete information presented on the website. Read our disclaimer.

پاکستان کے اندر غیرت کے نام پر ہمیشہ عورتوں کو ہی قتل کیا جاتا ہے ۔ مردوں کے اس معاشرے میں عورت درحقیقت مرد کی غیرت سمجھی جاتی ہے ۔ اس کے قدموں کی ذرا سی لغزش اس سے جڑے مردوں کی غیرت کے لیۓ ایک تازیانہ ٹابت ہوتی ہے اور اس کی سزا اس کی موت کے علاوہ اور کچھ نہیں ہوتی

اکیسویں صدی کے اس ترقی یافتہ دور میں آچ بھی ایسے مرد اور اسی سوچ ہمارے معاشرے کا حصہ ہے جس میں بہن ،بیٹی کو صرف اور صرف ایک جنس سے زیادہ اہمیت حاصل نہیں ہے اور اس کی زندگی کے تمام فیصلے ان ہی مردوں کے مرہون منت ہوتے ہیں جن کو وہ باپ یا بھائی کہتی ہے

مردان کی سر زمین جہاں کی اکثریتی آبادی پٹھان ہے وہاں پر عورتوں کووہ بنیادی حقوق بھی حاصل نہیں ہیں جو کہ پاکستان کے بڑے شہروں کی عورتوں کو حاصل ہیں ۔ ان عورتوں کے لیۓ تعلیم اور صحت کی سہولیات کا حصول ناممکن سمجھا جاتا ہے ۔ان کی زںدگیاں گھر کی چار دیواری سے شروع ہو کر گھر کی چار دیواری میں ہی ختم ہو جاتی ہے اور مرد حفاظت کے نام پر ان کو روٹی کپڑا دے کر یہ سمجھ بیٹھتے ہیں کہ انہوں نے اپنے تمام فرائض پورے کر دیۓ

ایسے میں ان مردوں کے فیصلے کے خلاف ذرا بھی آواز اٹھانا قطعی ناقابل قبول ہوتا ہے اور ایسی عورت کو ایسی سزا دی جاتی ہے کہ باقی تمام عورتیں اس کے حشر سے سبق سیکھ کر آئيندہ بغاوت کا علم بلند کرنے سے قبل سو بار سوچ لیں تفصیلات کے مطابق مردان پولیس کو ایک نوجوان لڑکی کی لاش مردان کے ایک کنوئيں سے ملی جس کے حوالے سے تحقیقات کی گئی

تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ یہ لاش  امتیاز، افتخار، سرتاج کی بہن کی ہے جس کو کچھ روز قبل ان تینوں بھائیوں نے مدثر نامی لڑکے سےتعلقات کے شبے میں بجلی کی تاروں سے شاک لگا لگا کر مار ڈالا تھا اور اس کے بعد اس کی لاش کو ایک کمبل میں لپیٹ کے قریبی خشک کنوئيں میں ٹھکانے لگا دیا تھا

اس کے ساتھ ساتھ ان بھائیوں نے مدثر نامی لڑکے کو بھی گولیاں مار کر ہلاک کر دیا تھا ۔ ان بھائیوں کے مطابق ان کو شبہ تھا کہ ان کی بہن کے تعلقات اس لڑکے مدثر سے تھے جس کے سبب غیرت میں آکر انہوں نے ان دونوں کو ٹھکانے لگا دیا پولیس نے ان دونوں بھائیوں کے ساتھ ساتھ ان کے والد سراج کو بھی گرفتار کر کے مقدمہ درج کر لیا ہے

غیرت کے نام پر عورتوں کا قتل اس علاقے کے روایات کا حصہ ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ تعلیم کو عام کرنے کے ساتھ ساتھ ایسے ملزمان کو فوری طور پر قرار واقعی سزا دی جاۓ تاکہ اس طرح کی ظلم و بربریت کا راستہ روکا جا سکے

Snap Chat Tap to follow
Place this code at the end of your tag: